فتنہ سے نجات کا ذریعہ

فتنہ سے نجات کا ذریعہ

ارشاداتِ نبوی صلی اللہ علیہ وسلم

حضرت حارث رضی اللہ عنہ کا بیان ہے کہ میں ایک مرتبہ مسجد میں گیا تو لوگ (وہاں دنیاوی) باتوں میں مشغول تھے۔ میں حضرت علی رضی اللہ عنہ کے پاس گیا اور ان سے عرض کیا: اے امیر المؤمنین! کیا آپ نہیں دیکھتے، لوگ (مسجد میں دنیاوی) باتوں میں مشغول ہیں۔ حضرت علی رضی اللہ عنہ نے پوچھا: کیا واقعی لوگ ایسا کررہے ہیں؟ میں نے عرض کیا: جی ہاں! اس پر حضرت علی رضی اللہ عنہ نے فرمایا: آگاہ ہوجائو، میں نے جناب رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم سے سنا ہے۔ آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے ارشاد فرمایا: ’’خبردار! ایک بہت بڑا فتنہ آنے والا ہے۔‘‘ میں نے عرض کیا: یا رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم اس فتنہ سے نجات پانے کا ذریعہ کیا ہے؟ آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا: ’’اللہ کی کتاب! اس میں تم سے پہلی امتوں کے (سبق آموز) واقعات ہیں اور تمہارے بعد کی اطلاعات (یعنی اعمال و اخلاق کے مستقبل میں ظاہر ہونے والے دنیوی و اُخروی نتائج) بھی ہیں اور تمہارے درمیان جو مسائل پیدا ہوں گے ان کا حکم اور فیصلہ (عادلانہ حل) موجود ہے۔ وہ فیصلہ کن کلام ہے (یعنی دنیا اور آخرت میں فیصلے اس کی بنیاد پر ہوں گے) اور وہ فضول بات نہیں ہے۔ جو سرکشی کی وجہ سے اس کو چھوڑے گا، اللہ تعالیٰ اس کو توڑ کے رکھ دے گا اور جو کوئی قرآن کے بغیر ہدایت تلاش کرے گا اللہ اس کو گمراہ کردے گا (یعنی وہ ہدایت حق سے محروم رہےگا) قرآن ہی اللہ کی مضبوط رسی (یعنی اللہ تعالیٰ سے تعلق کا مضبوط ذریعہ) ہے اور حکمت بھرا ذکر ہے اور وہی صراط مستقیم ہے۔ وہی حق مبین ہے جس کے اتباع سے خیالات کجی سے محفوظ رہتے ہیں اور زبانیں اس میں تحریف نہیں کرسکتیں۔ (یعنی جس طرح پچھلی کتابوں کو محرفین نے تبدیل کردیا، اس طرح قرآن حکیم میں کوئی تحریف نہیں ہوسکے گی) اور علم والے کبھی اس کے علم سے سیر نہیں ہوں گے۔ (یعنی قرآن میں تدبر کا عمل اور حقائق و معارف کی تلاش کا سلسلہ ہمیشہ ہمیشہ جاری رہے گا اور کبھی ایسا وقت نہیں آئے گا کہ قرآن کا علم حاصل کرنے والے محسوس کریں گے کہ ہم نے علم قرآن پر پورا عبور حاصل کرلیا ہے بلکہ ان کے علم کی طلب اور بڑھتی جائے گی) اور وہ (قرآن) کثرت تلاوت سے کبھی پرانا نہیں ہوگا (یعنی جس طرح دنیا کی دوسری کتابوں کا حال ہے کہ بار بار پڑھنے کے بعد ان کے پڑھنے میں آدمی کو لطف نہیں آتا، قرآن مجید کا معاملہ بالکل اس کے برعکس ہے۔ یہ جتنا پڑھا جائے گا اور جتنا اس میں تدبر و تفکر کیا جائے گا اتنا ہی اس کے لطف و لذت میں اضافہ ہوگا) اور اس کے عجائب (یعنی دقیق و لطیف حقائق اور حکمت و معرفت کے نئے نئے پہلو) کبھی ختم نہیں ہوں گے۔ قرآن حکیم کی شان تو یہ ہے کہ جب جنات نے اس کو سنا تو بے اختیار بول اٹھے، ’’ہم نے دل کو متاثر کرنے والا قرآن حکیم سنا ہے جو رہنمائی کرتاہے بھلائی کی طرف، لہٰذا ہم اس پر ایمان لائے۔‘‘ جس نے قرآن کے مطابق بات کہی اس نے سچ بات کہی اور جس نے قرآن پر عمل کیا وہ اجر و ثواب کا مستحق ہوا۔ اور جس نے قرآن کے موافق فیصلہ کیا اس نے عدل و انصاف کیا اور جس نے قرآن کی طرف دعوت دی اس کو صراط مستقیم کی ہدایت نصیب ہوئی ۔ (ترمذی)

Share This:

اسلامی مضامین

  • 02  مئی ،  2022

حضرت حسن رحمۃ اللہ علیہ، حضرت انس بن مالک رضی اللہ عنہٗ سے نقل کرتے ہیں کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے تین طرح کے...

  • 02  مئی ،  2022

حضرت حمید بن عبدالرحمن رحمۃ اللہ علیہ اپنی والدہ اُمّ کلثوم بنت عقبہ رضی اللہ عنہا سے روایت کرتے ہیں کہ ان کی والدہ نے...

  • 02  مئی ،  2022

حضرت جسرۃ رضی اللہ عنہا بنت دجاجہ روایت کرتی ہیں کہ حضرت عائشہ صدیقہ رضی اللہ عنہا نے فرمایا کہ میں نے حضرت صفیہ رضی اللہ...

  • 02  مئی ،  2022

حضرت مغیرہ رضی اللہ عنہٗ سے روایت ہے کہ نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم نے ارشاد فرمایا:’’اللہ تعالیٰ نے تم پر ماں کی...

  • 02  مئی ،  2022

حضرت ابن عمر رضی اللہ عنہما سے روایت ہے، فرماتے ہیں کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے ارشاد فرمایا:’’جو شخص اس بات کی...

  • 02  مئی ،  2022

آل خطاب کے ایک شخص سے روایت ہے کہ نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم نے ارشاد فرمایا:’’جو شخص قصداً میری زیارت کرتا ہے قیامت...

  • 02  مئی ،  2022

حضرت ابوہریرہ رضی اللہ عنہٗ سے روایت ہے، فرماتے ہیں کہ ایک مرتبہ آنحضرت صلی اللہ علیہ وسلم نے یہ آیت تلاوت فرمائی...

  • 02  مئی ،  2022

حضرت ابو حازم رضی اللہ عنہٗ فرماتے ہیں کہ میں نے حضرت سہل رضی اللہ عنہٗ سے سنا، فرماتے تھے کہ میں نے نبی کریم صلی اللہ...

  • 02  مئی ،  2022

حضرت ابوہریرہ رضی اللہ عنہٗ سے روایت ہے فرماتے ہیں کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے ارشاد فرمایا: جس شخص نے سورۂ دخان...

  • 02  مئی ،  2022

حضرت ابوہریرہ رضی اللہ عنہٗ سے روایت ہے کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے ارشاد فرمایا: میری اور مجھ سے پہلے انبیاء کی...

  • 01  مئی ،  2022

ارشاداتِ نبوی صلی اللہ علیہ وسلمحضرت ابو اُمامہ رضی اللہ عنہٗ کا بیان ہے کہ جناب نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم نے...

  • 01  مئی ،  2022

ارشاداتِ نبوی صلی اللہ علیہ وسلمجناب نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم کا ارشادِ مبارک ہے، جو شخص عید کے دن تین سو مرتبہ سبحان...

  • 01  مئی ،  2022

ارشاداتِ نبوی صلی اللہ علیہ وسلمحضرت عبداللہ بن بریدہ رضی اللہ عنہٗ اپنے والد سے نقل کرتے ہیں کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ...

  • 01  مئی ،  2022

اُمّ المؤمنین حضرت عائشہ صدیقہ رضی اللہ عنہا کا بیان ہے کہ میں نے جناب رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کو یہ فرماتے ہوئے...

  • 01  مئی ،  2022

حضرت ابوہرزہ فضیلہ بن عبید الا سلمی رضی اللہ عنہ کا بیان ہے کہ جناب رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:قیامت کے دن...

  • 01  مئی ،  2022

حضرت ابو ہریرہ رضی اللہ عنہ کا بیان ہے کہ جناب رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے ارشاد فرمایا: سات قسم کے افراد ایسے ہیں کہ...

  • 01  مئی ،  2022

حضرت انس بن مالک رضی اللہ عنہ نے جناب رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کا یہ ارشاد نقل کیا ہے کہ آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے...

  • 01  مئی ،  2022

حضرت انس بن مالک رضی اللہ عنہ کا بیان ہے کہ میں نے جناب رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کو یہ فرماتے ہوئے سنا کہ اللہ تعالیٰ...

  • 01  مئی ،  2022

حضرت جندب بن عبداللہ رضی اللہ عنہ کا بیان ہے کہ جناب رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:جس شخص نے نماز فجر پڑھ لی وہ...

  • 01  مئی ،  2022

حضرت عدی بن حاتم رضی اللہ عنہ کا بیان ہے کہ جناب رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:جلد ہی تم میں سے ہر ایک کے ساتھ...