وَبِصَوْمِ غَدٍ نَّوَيْتُ مِنْ شَهْرِ رَمَضَانَ.
I Intend to keep the fast for month of Ramadan

شادی شدہ بہن کو زکوٰۃ کی ادائیگی

Islamic Q&A
شادی شدہ بہن کو زکوٰۃ کی ادائیگی

کتاب و سنت کی روشنی میں

سوال:میری چھوٹی شادی شدہ بہن کا شوہر کوشش کے باوجود ابھی تک کہیں نوکری حاصل کرنے میں کامیاب نہیں ہوسکا۔ اپنی استطاعت کے مطابق اس کی امداد کرتی رہتی ہوں۔ کیا زکوٰۃ کی رقم سے اس کی مدد کی جاسکتی ہے؟

جواب:بہن، بہنوئی اگر ضرورت مند ہوں تو ان کو زکوٰۃ کی رقم دی جاسکتی ہے بلکہ اپنے رشتے داروں، دوست، احباب اور اعزا و اقارب میں اگر کوئی مستحق زکوٰۃ ہو تو دوسروں کو زکوٰۃ دینے سے ان کو زکوٰۃ دینا زیادہ بہتر ہے۔ یہ ایک طرح سے صلہ رحمی بھی ہے جو عظیم نیکی ہے جس کے سبب حدیث شریف میں درازیٔ عمر کی خوشخبری سنائی گئی ہے۔ یعنی اس سے صلہ رحمی کا بھی ثواب ملے گا۔ یہ بات بھی قابل ذکر ہے کہ اقارب میں شوہر، بیوی، والدین، دادا، دادی، نانا، نانی نیز اپنی اولاد، پوتا، پوتی اور نواسا، نواسی کو زکوٰۃ کی رقم نہیں دی جاسکتی۔ زکوٰۃ کی رقم کیلئے یہ ضروری نہیں کہ اس کے متعلق بتایا جائے کہ یہ زکوٰۃ کی رقم ہے۔ ہدیہ اور تحفہ وغیرہ کے عنوان سے بھی زکوٰۃ کی رقم دی جاسکتی ہے۔